بیوٹی ٹپس

عورت کی خوبصورت کا اہم ترین راز

breast enlargement naturally
Written by Beauty Tipso

یوں تو عورت کی خوبصورت کا ماپنے والا دنیا میں نہ تو کوئی آلہ بنا ہے اور شاید نہ ہی کبھی بن پائے رہتی دنیا تک۔ مگر ایسا بھی نہیں ہے کہ کسی کی خوبصورتی کا جانچا بھی نہ جا سکے۔

اگر آج سے پچاس برس پہلےے کوئی یہ بات کہتا کہ عورتوں کو اپنے سینہ اور چھاتیوں کی دیکھ بھال کرنی چاہیے تو سب کی آنکھیں اور کان بند کر لیتے ۔ اس وقت تک پستانوں کو بچوں کو دودھ پلا کر پالنے کا ذریعہ کے علاوہ اور کچھ نہ سمجھا جاتا تھا۔ لیکن آج کے دور میں اس بارے میں بات کرنا اور جسم کے دیگر اعضاء کی طرح ہی جسم کے اس اہم حصہ کی دیکھ بھال کرنا ایک عام بات مانی جاتی ہے۔ عورت کے جسم میں سب سے زیادہ اہم اس کے پستان ہیں۔ جسم کو خوبصورت اور ڈول بنانے میں جسم کے اس حصہ کا بہت بڑا کردار ہے۔ اگر آپکے پستان کمزور اور کم سائز کے ہیں تو یقین جانیے کہ خود بھی آپ کو اپنی جسامت ہر گز خوبصورت نہیں لگے تو پھر کیسے ممکن ہو سکتا ہے کہ کوئی دوسرا آپ کو خوبصورت جانے اور آپ سے پیار کرے۔

آج کے دور میں عورتیں بھی اس بات کو اچھی طرح سمجھنے لگی ہیں۔ اور جن عورتوں کے پستان قدرتی طور پر چھوٹے ہوں ان میں احساس کمتری پیدا ہو جاتی ہے۔

جس عورت کے پستان قدرتی طور پر چھوٹے ہوں۔ اسے کیا کرنا چاہیے؟ میرا کہنا ہے کہ اسے کچھ بھی نہیں کرنا چاہیے جس طرح آج چوڑے سینے اور بڑے پستانوں والی عورتوں کو حسین سمجھا جاتا ہے ۔ جیسا کہ عام نظریہ ہے لیکن جسم کا صرف کوئی ایک ہی حصہ اسے خوبصورت نہیں بناتا۔ مثلا چھوٹے پائوں، بڑے ہاتھ اور تیکھی اور ستواں ناک حسن کی علامتیں نہیں۔ اسی طرح سینہ کے ابھار کا کم یا زیادہ ہونا بھی عورت کو ناپنے کا واحد پیمانہ نہیں۔

دوسری بات یہ ہے کہ عورت کی خوبصورتی کے لیے اس کے پستانوں کا ہی بڑا ہونا ضروری نہیں بلکہ ان کی شکل و شباہت ایک بہت ہی اہم بات ہے۔ صرف چند ضروری ورزشیں کرنے سے یا اچھی بریزر پہننے سے عورت کے سینے کا ابھار سڈول اور خوبصورت نظر آنے لگا گا۔

beautytip

ایک ڈاکٹر کی حثیت سے یہ میرا تجربہ ہے بہت سارے لوگ پوچھنا چاہیں گے کہ کیا ایسی کوئی ٹانک یا دوائی ہے جس سے چھوٹے پستان بڑے ہوسکیں۔ اس کا صرف ایک ہی جواب ہے۔ نہیں۔ پستان ایک طرح کے غدودوں والی پتلی اور باریک جھلیاں ، چربی دار جھلی یا الاسٹک کی طرح کھینچنے والے گوشت کے پٹھوں سے بنے ہوئے ہیں۔ پستانوں کے چھوٹے یا بڑے ہونے کا انحصار سارے جسم کے کل وزن سے زیادہ اسکے غدودوں پر ہے۔ اگر جسم کا وزن بڑھایا جائے گا پستانوں میں رہنے والی چربی دار جھلی یعنی کہ ٹشو بھی بڑھیں گے۔ اور سینے کا ابھار گولائی میں اور ابھرا ہوا لگے گا۔ اسی طرح اگر ڈائٹ کم کرکے جسم کے وزن کو کم کیا جائے گا تو پستان بھی اپنے آپ چھوٹے ہو جائیں گے۔ لیکن سارے جسم پر اثر ڈالے بغیر ہی پستانوں کو بڑھانے کا کوئی اور ذریعہ یا طریقہ نہیں ہے۔

عورت کی خوبصورتی میں پستانوں کا کردار

پستانوں کے اندر گانٹھیں یا غدود ہوتے ہیں۔ جنہیں “ممری گلینڈز” کہتے ہیں۔ یہی غدود بہت زیادہ کام کرتے ہیں یہ غدود کسی طرح کے چھوٹے چھوٹے غدودوں سے مل کر بنے ہوتے ہیں۔ جنہیں پٹھے کہتے ہیں۔ یہ پٹھے بہت سی باریک باریک نالیوں اور کھنڈی نما غدودوں سے ملکر بنے ہوتے ہیں ان میں سے بیس پٹھے تو خاص ہوتے ہیں اور جو دیگر کے مقابلہ میں زیادہ بڑے بھی ہوتے ہیں۔ اور باقی ان کے معاون ہوتے ہیں۔

یہ سارے پٹھے سرپستان کی طرح جاتے ہیں اور ان کا سب سے بڑا کام پستان بننے والے دودھ کو نپل تک پہنچانا ہوتا ہے۔ ان میں سے ہر پٹھا ننھے ننھے دیگر پٹھوں اور نالیوں سے بنا ہوتا ہے۔ یہ چھوٹے بڑے سارے پٹھے ایک دوسرے سے گہرا تعلق رکھتے ہیں اور ان کے اوپر موٹے گدی دار پٹھے ہوتے ہیں جن کے اوپر سارے جسم پر چڑھی ہوئی جلد کے مقابلہ میں زیادہ ملائم اور گدگدی اور لچک دار کھال چڑھی ہوئی ہوتی ہے۔ جو انہیں محفوظ رکھتی ہے۔

سرپستان یا نپل گوشت کا ایک عضو ہے جس میں پندرہ سے بیس تک باریک باریک سوراخ ہوتے ہیں ان سے ہی گزر کر دودھ باہر نکلتا ہے۔ اکثر عورتوں کا یہ خیال ہے کہ سرپستان میں صرف ایک سوراخ ہوتا ہے۔ یہ خیال غلط ہے کیونکہ اس میں ایک نہیں بلکہ کئی سوراخ ہوتے ہیں۔ اس کے اوپر ایک کالی جلد چڑھی ہوئی ہوتی ہے۔ جسے چھونے سے گدگدی لگتی ہے۔ گوشت سے بنا ہوا ہونے کی وجہ سے سر پستان تھکاوٹ ، جوش ، سردی کی وجہ سے یا چھونے سے کڑایا سخت ہوتا ہے۔ اس میں گدگدی سی محسوس ہوتی ہے اور سکڑتا ہے۔

About the author

Beauty Tipso

Yasir Hafeez, Student of Information and Communication Technology. Writing article on Health, Education, Beauty Tips, Beauty Tips and Tricks, Beauty Secrets, Beauty Recommendation, Beauty Tips in Urdu, Beauty tips for girls, Research, Communication, Technology is his hobby. Basically he is an IT Professional as well so he share knowledge through writing. You can also read Yasir Hafeez's articles at Beauty Tips, http://www.beautytipso.com

Leave a Comment